ٹیپو سلطان کا سفر آخرت

وہ عالمِ تصور میں میسور کے شیر کو ایک خوفناک دھاڑ کے ساتھ اپنے پرحملہ آور ہوتا دیکھ کر چونک جاتا تھا‘ اسکی سپاہ سرنگا پٹم کے میدان میں جمع ہونے والے سپاہیان اسلام کی نعشوں میں میسور کے شیر کو تلاش کر رہے تھے

مسلمانوں کے ملک میں پرندے بھوک سے نا مر جائیں

زیر نظر تصویر ترکی کی ہے جہاں ایک بہت پرانی اسلامی روایت ابھی تک زندہ ہے کہ جب سردی کا عروج ہو اور پہاڑوں پر برف پڑ جائے تو یہ لوگ چوٹیوں پر چڑھ کر اس وقت تک دانہ پھیلاتے رہتے ہیں جب تک برفباری ہوتی رہے۔ اور یہ اس لیئے ہے کہ پرندے اس موسم میں کہیں بھوک سے نا مر جائیں۔

پاپا نے پادری بنانا چاہا ۔۔۔مگر۔۔۔؟

میں اپنے کسی کام کے سلسلہ میں ’’تیونس‘‘ گیا۔ میں اپنے یونیورسٹی کے دوستوں کے ساتھ یہاں کے ایک گاؤں میں تھا۔ وہاں ہم دوست اکٹھے کھا پی رہے تھے۔ گپ شپ لگا رہے تھے کہ اچانک اذان کی آواز بلند ہوئی اللہ اکبر اللہ اکبر۔۔۔

داستان ایک متکبر کی

سبحان الله ! یہ تھا اسلام کا انصاف

میں اپنا ثواب نہیں بیچوں گا

عموریہ کی جنگ میں پیش آنے والا ایک دلچسپ واقعہ

اگست 20, 2012

ہلال عید ہماری ہنسی اڑاتا ہے



 فلسطین: نماز عید کی امامت منتخب فلسطینی صدر اسماعیل ھنیہ نے کی ۔ عید سے چند روز قبل اسرائیل نے عثمانی دور کی تاریخی مسجد میں شراب میلہ منانے کا اعلان کیا تھا۔ دنیا بھر میں اس پر غم و غصے کا اظہار کیا جا رہا ہے۔
•••••••••••••••••••••••••••••••••••••
کشمیر : حریت پسند رہنما علی گیلانی اور یاسین ملک عید سے ایک روز قبل گرفتار کر لیے گئے ۔۸۲ سالہ علی گیلانی کو عید کے روز نظر بند کر کے سو پور میں نماز عید کی امامت سے روک دیا گیا۔
•••••••••••••••••••••••••••••••••••••
شام: شام میں عید کے روز بشار الاسد نامی خونی درندے کی پالتو سکیورٹی فورسزکی کارروائی میں سو سے زائد افرادہلاک ہوگئے۔
•••••••••••••••••••••••••••••••••••••
برما : ہزاروں برمی بے گھر مسلمانوں نے پناہ گزین کیمپوں میں روز عید گزارا۔ برمی حکومت نے یواین او، صحافیوں، این جی اوز، اور انسانی حقوق کے کارکنوں سمیت بیرونی عناصر کی علاقے میں جانے پر سخت پابندی لگا رکھی ہے۔
•••••••••••••••••••••••••••••••••••••
پاکستان : شمالی وزیرستان میں روزعید امریکی ڈرون حملوں میں سات معصوم پاکستانی بے خطا مارے گئے۔ اگلے دن مزید دو حملوں میں گیارہ افراد ہلاک۔ ان پر نہ تو کوئی مقدمہ چلا، نہ ان کے جرم کے کوئی ثبوت کسی کو دکھائے گئے۔ یہ کسی بااثر ہستی کے مقرب نہیں تھے ۔ عام انسان تھے۔ اس لیے ان کا قتل درجنوں میں ہوتا ہے اور عید کے روز ہوتا ہے۔ ان کےنام کیا تھے؟یہ کون تھے؟ کیا کرتے تھے؟ کوئی نہیں جانتا ، امریکا بیان جاری کرتا ہے کہ یہ فلاں گروپ سے تھے اور ہم دنیا کی اس جھوٹی ترین، بے شرم ترین قوم کی بات مان لیتے ہیں جس نے عراق میںWMDs کا سفیدجھوٹ بولا تھا ؟؟؟ پاکستانی میڈیا پر کوئی ان کے لیے نہیں روتا۔ جن کے لیے اپنے نہ روئیں ان کے لیےکون روتا ہے؟
•••••••••••••••••••••••••••••••••••••
جرمنی : عید کے روز جرمن مسلم مساجد کے باہر اسلام مخالف جرمن انتہا پسند تنظیم نے عدالت کی اجازت سے پولیس کی حفاظت میں پیغمبر اسلام صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کے گستاخانہ خاکوں والے پلے کارڈ اٹھا کر مظاہرہ کیا۔ ’’ جرمنی میں اسلام کی کوئی جگہ نہیں‘‘ نعرے لگائے۔ جرمن عدالت نے آخری عشرے میں مسلمانوں کی درخواست کے خلاف فیصلہ دیتے ہوئے’’فن کی آزادی ‘‘کے نام پر ان خاکوں کی اشاعت کی اجازت دی تھی جو ۲۰۰۵ میں ڈنمارک کے ملعون کارٹونسٹ نے بنائے تھے۔


پیام عيش و عشرت ہمیں سناتا ہے
ہلال عید ہماری ہنسی اڑاتا ہے


یہ پونے دو ارب آبادی کی حامل امت مسلمہ کی حالت زار کی ایک ہلکی سی جھلک ہے ۔ کیا اس امت کے بیٹے بیٹیوں کو یہ زیبا ہے کہ ان کی عید لغو کھیل تماشوں میں گزرے ؟
••••••••••••••••••••••••••••••••••••• 

 

0 comments:

ایک تبصرہ شائع کریں