ٹیپو سلطان کا سفر آخرت

وہ عالمِ تصور میں میسور کے شیر کو ایک خوفناک دھاڑ کے ساتھ اپنے پرحملہ آور ہوتا دیکھ کر چونک جاتا تھا‘ اسکی سپاہ سرنگا پٹم کے میدان میں جمع ہونے والے سپاہیان اسلام کی نعشوں میں میسور کے شیر کو تلاش کر رہے تھے

مسلمانوں کے ملک میں پرندے بھوک سے نا مر جائیں

زیر نظر تصویر ترکی کی ہے جہاں ایک بہت پرانی اسلامی روایت ابھی تک زندہ ہے کہ جب سردی کا عروج ہو اور پہاڑوں پر برف پڑ جائے تو یہ لوگ چوٹیوں پر چڑھ کر اس وقت تک دانہ پھیلاتے رہتے ہیں جب تک برفباری ہوتی رہے۔ اور یہ اس لیئے ہے کہ پرندے اس موسم میں کہیں بھوک سے نا مر جائیں۔

پاپا نے پادری بنانا چاہا ۔۔۔مگر۔۔۔؟

میں اپنے کسی کام کے سلسلہ میں ’’تیونس‘‘ گیا۔ میں اپنے یونیورسٹی کے دوستوں کے ساتھ یہاں کے ایک گاؤں میں تھا۔ وہاں ہم دوست اکٹھے کھا پی رہے تھے۔ گپ شپ لگا رہے تھے کہ اچانک اذان کی آواز بلند ہوئی اللہ اکبر اللہ اکبر۔۔۔

داستان ایک متکبر کی

سبحان الله ! یہ تھا اسلام کا انصاف

میں اپنا ثواب نہیں بیچوں گا

عموریہ کی جنگ میں پیش آنے والا ایک دلچسپ واقعہ

جنوری 29, 2011

لائق لیکن غریب طالبعلم



اس تصویر کے بارے میں آپکا کیا خیال ہے۔۔۔ ؟
 

نوید آصف الحمرا ہال لاہور کے اس جلسے میں کوئی سیٹ نہ ملنے پر سیڑھیوں پر بیٹھا تھا۔ جس میں اسے گولڈ میڈل ملنا تھا۔ اس نے لاہور بورڈ کے امتحان میں پورے نو سو انیس نمبر حاصل کرکے دوسری پوزیشن حاصل کی تھی۔دوسری پوزیشن حاصل کرنے والا طالب علم اوکاڑہ کے گاﺅں ناریوال سے تھا۔ اس کا اسکول اس کے گھر سے سات کلو میٹر دور تھا۔ جہاں وہ روزانہ پیدل جاتا تھا۔اس جلسے میں آنے سے پہلے وہ شام کو اپنی ماں کے پاس بیٹھا تھا۔ کہ لاہور میٹرک بورڈ کے اہلکاروں کی ایک ٹیم اسے دھونڈتی ہوئی اس کے گاﺅں پہنچی۔ نوید اقبال اور اس کی ماں ان کی آمد کی خبر پا کر ڈر سے گئے۔ چند دن پہلے ان کی بھینس چوری ہوگئی تھی۔چوری کے اس واقعے سے وہ دلبرداشتہ تھے۔پھر انھیں خوشخبری سنائی گئی کہ نوید اقبال لاہور میٹرک بورڈ کے امتحان میں دوسرے نمبر پر آیا ہے۔ اور کل وزیر اعلی پنجاب اسے ایک تقریب میں گولڈ میڈل دیں گے۔نوید اقبال لاہور الحمرا پہنچ گیا۔ لیکن اس جلسہ گاہ میں جہاں اس کی اعلی کارکردگی کو سراہا جانا تھا، اس کے لئے کوئی نششت خالی نہ تھی۔وہ جلسہ گاہ کی سیڑھیوں پر بیٹھ گیا۔پھر جب اس کا نام پکارا گیا تو پتہ چلا کہ یہ تو وہ طالب علم ہے جس نے گولڈ میڈل حاصل کیا ہے۔اسپنچ کی چپل پہن کر اس نے گولڈ میڈل حاصل کیا

2 comments:

  1. گوگل پر تلاش کے دوران اتفاقا یہ پوسٹ نظر سے گزری۔کیا اس نوجوان کا ٹیلیفون نمبر مل سکتا ہے ؟

    رضوان خان
    میونخ - جرمنی

    جواب دیںحذف کریں
    جوابات
    1. جی رضوان بھائی، کوشش کروں تو مل جائے گا نمبر ان شا الله
      کس سلسلے میں آپ کو اس کا نمبر چاہئیے؟

      حذف کریں