ٹیپو سلطان کا سفر آخرت

وہ عالمِ تصور میں میسور کے شیر کو ایک خوفناک دھاڑ کے ساتھ اپنے پرحملہ آور ہوتا دیکھ کر چونک جاتا تھا‘ اسکی سپاہ سرنگا پٹم کے میدان میں جمع ہونے والے سپاہیان اسلام کی نعشوں میں میسور کے شیر کو تلاش کر رہے تھے

مسلمانوں کے ملک میں پرندے بھوک سے نا مر جائیں

زیر نظر تصویر ترکی کی ہے جہاں ایک بہت پرانی اسلامی روایت ابھی تک زندہ ہے کہ جب سردی کا عروج ہو اور پہاڑوں پر برف پڑ جائے تو یہ لوگ چوٹیوں پر چڑھ کر اس وقت تک دانہ پھیلاتے رہتے ہیں جب تک برفباری ہوتی رہے۔ اور یہ اس لیئے ہے کہ پرندے اس موسم میں کہیں بھوک سے نا مر جائیں۔

پاپا نے پادری بنانا چاہا ۔۔۔مگر۔۔۔؟

میں اپنے کسی کام کے سلسلہ میں ’’تیونس‘‘ گیا۔ میں اپنے یونیورسٹی کے دوستوں کے ساتھ یہاں کے ایک گاؤں میں تھا۔ وہاں ہم دوست اکٹھے کھا پی رہے تھے۔ گپ شپ لگا رہے تھے کہ اچانک اذان کی آواز بلند ہوئی اللہ اکبر اللہ اکبر۔۔۔

داستان ایک متکبر کی

سبحان الله ! یہ تھا اسلام کا انصاف

میں اپنا ثواب نہیں بیچوں گا

عموریہ کی جنگ میں پیش آنے والا ایک دلچسپ واقعہ

اپریل 9, 2012

dastan iman faroshon ki


داستان ایمان فروشوں کی- التمش
سلطان صلاح الدین ایوبی کے دور کی حقیقی کہانیاں  

 





Dastan Iman Faroshon Ki by Al-Tamash is great book

3 comments:

  1. bhai is mai kafi information galat hai, infct salahuddin ayubi Noor-ud-din zangi ka rishtay mai kuch nahin lagta tha wo jab Noor ud din zangi k darbar mai apnay walid aur chacha k sath ay tha tab bacha tha laikin us ki salahiyaton ko daikhtay huae Noor ud din zangi nai usay darbar mai bulana shuro kar dia tha

    جواب دیںحذف کریں
  2. Mr Aabid Hussain
    apnay ye information kahan say li kia kisi book ka hawala day saktay hian ...
    mujay history ka shouk hay laikin in dono kay baray main maira ilm itna nai hay ..plz if u have any ifromative link plz tell me i will purchase from markeet

    جواب دیںحذف کریں
  3. i think that you should consult history books in this regard...
    but try to get non-Muslim's authors...

    جواب دیںحذف کریں